مقام مصطفیٰ صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم حصہ اول


01/10/2018

 مقام مصطفیٰ صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم قربان اس کی ہمہ جہت نظروں کے! آپ انسان کے جسم اور روح دونوں کو دیکھتے ہیں ی


فرمایا:
1. إِنَّ عَيْنَيَّ تَنَامَانِ وَلَا يَنَامُ قَلْبِي ۔
(صحیح بخاری :كتاب التهجد :16- بَابُ قِيَامِ النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ بِاللَّيْلِ فِي رَمَضَانَ وَغَيْرِهِ: حدیث نمبر: 1147)
حقیقت یہ ہے کہ میری دونوں آنکھیں سوتی ہیں میرا دل نہیں سوتا۔
2. ‏‏‏‏‏‏أَنّ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، ‏‏‏‏‏‏قَالَ:‏‏‏‏ "هَلْ تَرَوْنَ قِبْلَتِي هَا هُنَا، ‏‏‏‏‏‏فَوَاللَّهِ مَا يَخْفَى عَلَيَّ خُشُوعُكُمْ، ‏‏‏‏‏‏وَلَا رُكُوعُكُمْ إِنِّي لَأَرَاكُمْ مِنْ وَرَاءِ ظَهْرِي".
(صحیح بخاری: كتاب الصلاة 40- بَابُ عِظَةِ الإِمَامِ النَّاسَ فِي إِتْمَامِ الصَّلاَةِ، وَذِكْرِ الْقِبْلَةِ: حدیث نمبر: 418)
رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کیا تمہارا یہ خیال ہے کہ میرا منہ (نماز میں) قبلہ کی طرف ہے (اس لیے میں تمہیں نہیں دیکھتا؟)، اللہ کی قسم! مجھ سے نہ تمہارا خشوع چھپتا ہے نہ رکوع، میں یقینا اپنی پیٹھ کے پیچھے سے تم کو دیکھتا رہتا ہوں۔
اگلی روایت میں اس طرح ہے:
صَلَّى بِنَا النَّبِيُّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ صَلَاةً، ‏‏‏‏‏‏ثُمَّ رَقِيَ الْمِنْبَرَ، ‏‏‏‏‏‏فَقَالَ فِي الصَّلَاةِ وَفِي الرُّكُوعِ:‏‏‏‏ "إِنِّي لَأَرَاكُمْ مِنْ وَرَائِي كَمَا أَرَاكُمْ".(صحیح بخاری: كتاب الصلاة 40- بَابُ عِظَةِ الإِمَامِ النَّاسَ فِي إِتْمَامِ الصَّلاَةِ، وَذِكْرِ الْقِبْلَةِ: حدیث نمبر: 419)
نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے ہمیں ایک مرتبہ نماز پڑھائی، پھر آپ صلی اللہ علیہ وسلم منبر پر چڑھے، پھر نماز کے باب میں اور رکوع کے باب میں فرمایا: میں تمہیں پیچھے سے بھی اسی طرح دیکھتا رہتا ہوں جیسے اب سامنے سے دیکھ رہا ہوں۔

قربان اس کے! جس کا قلب کبھی نہیں سوتا، جو لوگوں کے دلی حالات (خشوع) اور جسم دوں کو دیکھتا ہے۔ ہر طرف دیکھتا ہے اور ہر وقت دیکھتا ہے۔

 
 
Follow Us On:
share on facebook
share on twitter
share on google plus
print this
 
ہائر ایجوکیشن موٹیویشن اینڈ گائنڈنس پروگرام
اصغریہ پاکستان
قرآن کریم
Copyright © 2017 . جملہ حقوق محفوظ ہیں
Designed and Developed By: ICreativez